شناور اسحاق ۔۔۔ گلیوں گلیوں از شاہین عباس

"گلیوں گلیوں” از شاہین عباس کارخانہ ہے”یاں” تو جادو کا شاہین عباس کی دوستی میرے قیمتی اثاثوں  میں سے ہے۔ اس کی محبت ہے کہ اس نے اپنی غزلوں کےچوتھے مجموعے "گلیوں گلیوں” کا نسخہ اول ناچیز کو بھجوایا ۔۔۔ اپنے دوستوں میں دو لوگوں کا استغراق ہمیشہ میرے لیے قابلِ رشک رہا ، ایک شاہین عباس اور دوسرے ۔۔۔   ان کا ذکر کچھ دنوں کے بعد آئے گا ۔۔۔ کچھ روز پہلے اپنے نظام شمسی کے بارے میں ایک مختصر دستاویزی فلم دیکھی ۔۔۔  اتنی بڑی کائنات میں زمین…

Read More

محمد اکبر خان اکبر ۔۔۔ پرچم تلے(ثمینہ تبسم)

 کتاب: پرچم تلےمصنفہ: ثمینہ تبسمتبصرہ نگار: محمد اکبر خان اکبر۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ چند روز قبل کینڈا میں مقیم معروف شاعرہ اور مصنفہ محترمہ ثمینہ تبسم کی جانب سے ان کی چند گراں قدر تصانیف موصول ہوئیں جن میں اول اول’’پرچم تلے‘‘ کے مطالعے کا آغاز اپنی پسندیدہ صنف ادب سوانح عمری اور آپ بیتی سے متاثر ہو کر کیا تو معلوم ہوا کہ محترمہ ثمینہ تبسم صاحبہ تو اعلی پائے کی نثر نگار بھی ہیں۔کتاب ’’پرچم تلے‘‘ ایک ایسی ہی کتھا ہے جسے شروع کر کے رکھنا محال ہے جب تک مکمل…

Read More

پروفیسر شوکت محمود شوکت۔۔۔۔پاک سر زمین شادباد (ایک نادر اور جامع دستاویز)

پاک سر زمین شادباد ۔۔۔ ایک نادر اور جامع دستاویز۔۔۔ یہ امر مسلمہ ہے کہ اپنے وطن،اپنے دیس،اپنی سر زمین اور اپنی مٹی سے عشق انسانی سرشت میں بدرجہ اتم پایا جاتا ہے۔ جس مٹی میں آباء و اجداد کی قبریں ہوں اس دھرتی کی محبت نہ تو وجوہ کی محتاج ہوتی ہے اور نہ ہی کسی قدغن کی سزاوار۔ جس طرح عقیدت و احترام ماں کے چہرے سے نہیں بل کہ اس کی سچی ممتا سے مشروط ہے بعینہٖ، لیلائے وطن اور دیس کی مٹی سے عشق و عقیدت…

Read More

صادق جاوید (گڑھی اختیار خان ) ۔۔۔ ’’شعوروادراک ‘‘ کے خصوصی شمارہ ’’ حیدر قریشی گولڈن جوبلی نمبر‘‘پر تبصرہ

’’شعوروادراک ‘‘ کے خصوصی شمارہ ’’ حیدر قریشی گولڈن جوبلی نمبر‘‘پر تبصرہ حضرت شیخ سعدی کا قول ہے ’’ تمہاری اَصل ہستی تمہاری سوچ ہے باقی تو گوشت اور ہڈیاں ہیں ‘‘ ۔ بات ہے بھی دل کو لگنے والی انسان کو اللہ نے علم سے فضیلت عطا کی ہے جس کا محور سوچ ہی ہے اپنی سوچوں کو بہترین پیرا ئے میں پرو کر لفظوں کو مالا کا روپ دے لینا حیدر قریشی کے بائیں ہاتھ کا کھیل ہے اسی وجہ سے ان کی نظمیں طویل و مختصر ،…

Read More

صائمہ فردوس ۔۔۔ عصری اَدب کا ترجمان __’’شعوروادراک‘‘

عصری اَدب کا ترجمان … …’’شعوروادراک‘‘ ………………………………………………  ادبی جریدہ چند مطبوعہ اوراق کا پلندہ نہیں ہوتا بلکہ اسے ادباء، فضلا اور علماء کی ایسی انجمن کا درجہ حاصل ہوتا ہے جس سے نہ صرف معاشرے کو فکری اور نظریاتی طور پر مائل بہ ارتقاء رکھا جا سکتا ہے بلکہ اس کے باطن میں ایک دَور کی سماجی ،فکری اور تخلیقی کروٹیں محفوظ ہو جاتی ہیں۔ ادبی جریدہ نگاری جہاں عوام اور خواص کے ذہن کو نئی روشنی سے منور کرتی ہے ‘وہیں اس سے نئے لکھنے والوں کی ذہنی تربیت…

Read More

غلام حسین ساجد … آدمِ ثانی/غلام حسین غازی

ناول: آدمِ ثانی ………….. ناول نگار: غلام حسین غازی  ……………………………… علیگڑھ پبلشرز کا نہ معلوم کب اور کہاں سے شائع ہونے والا یہ ناول (ISBN 000-000-000-0) مجھے دو برس پہلے ملا تھا اور میں نے اس کتھا کے زمانۂ وقوع سے ایک سو سال پہلے پڑھا۔ سادہ لفظوں میں یہ ایک سائنس فکشن ہے۔زمین پر قیامت برپا ہو چکی۔یہ 2120 یعنی 01 بعد قیامت کا زمانہ ہے۔چاندوی اور مریخی بستیوں کے باسی کل گیارہ ہزار نفوس دوسری کہکشاؤں میں کسی نئی”زمین”کی تلاش میں ہیں۔وہ موت اور بدن کے زوال پر…

Read More

محمد یوسف وحید ۔۔۔ خالد جاوید کے نعتیہ مجموعے’’خوشبوئے مدینہ ‘ ‘ پر تبصرہ

خالد جاوید کے نعتیہ مجموعے’’خوشبوئے مدینہ ‘ ‘ پر تبصرہ ’’ تو غنی از ھر دو عالم من فقیر ‘ ‘ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ دل ِ حزیں کا سکوں ہے ہَوا مدینے کی فضائے خُلد کی ہمسر فضا مدینے کی ملے اب ا ذن ِ حضوری رسولؐ کے دَر سے خدا دکھائے مجھے بھی فضا مدینے کی ’خوشبوئے مدینہ‘ محترم ادیب دوست خالد جاوید کا پہلا اُردو نعتیہ مجموعہ ہے ۔ جس میں ایک حمد ، 45 نعتیں،2منقبت اور 3سلام شامل ہیں ۔’ ’خوشبوئے مدینہ‘‘  112صفحات پر مشتمل مجلد خوب صورت اشاعت…

Read More

کلیات نما( خالد علیم)۔۔۔ تبصرہ: مظفر حسن

محترم خالد علیم کے ” کلیات نما ” میں شاعری کی کم و بیش ہر صنف اپنی جلوہ گری دکھا رہی ہے۔نعت گوئی میں خالد علیم صاحب شوق و نیاز و عشق کے سانچے میں ڈھل کر آتے ہیں۔ خالد صاحب کے ہاں نعت رسولِ کریم، قلب و نظر کی حضوری کا دوسرا نام ہے۔نعت کے ساتھ ساتھ انہوں نے سلام اور منقبت میں بھی اپنی طبعِ رواں کے جوہر دکھائے ہیں۔ ان کی حمدیہ و نعتیہ رباعیات بھی ان کی قادر الکلامی کی عکاس ہیں۔ کلیات نما میںخالد صاحب…

Read More

شاہد ماکلی… آتشِ بیگانگی( صابر ظفر)

صابر ظفر صاحب کا تخلیقی وفور لائقِ رشک ہے ۔ لمحہ بہ لمحہ بدلتی ہوئی زندگی اور جدید سماج کی صورتِ حال کی تمثال آفرینی کے نمونے ان کے ہاں کثرت سے ملتے ہیں ۔ پھر یہ کہ جدید سے جدید مثبت شعری رجحانات سے وابستگی نے انھیں ہمیشہ تازہ دم رکھا ہے ۔ وہ معاصر ادبی، سماجی، سیاسی اور تخلیقی نیرنگیوں سے رس کشید کر کے اپنی غزل میں سموئے جاتے ہیں اور اپنی تازہ دمی اور توانائی کو بحال رکھ کر تخلیقی منہاج پر آگے سے آگے بڑھے…

Read More

جلیل عالی ۔۔۔ باغِ گلِ سرخ ( افتخار عارف)

مضبوط بندش اور روایت کے تخلیقی تسلسل کے ممتاز شاعر جناب افتخار عارف کا تازہ شعری مجموعہ "باغِ گلِ سرخ” موصول ہوا۔افتخار عارف اپنے فکری و تہذیبی تشخص کی کلیت میں جیتے اور شعر کہتے ہیں۔ان کے کلام اور ان کی شخصیت میں کہیں دوئی کا شائبہ نہیں ہوتا۔ قدرت نے انہیں فکر و احساس اور زاویۂ نگاہ کے ایسے توازن سے نواز رکھا ہے کہ انہیں کسی پہلو سے معذرت خواہی کی کبھی ضرورت محسوس نہیں ہوئی۔ وہ ایک صاحبِ واردات شاعر ہیں اور حضرت علی رض کے اس…

Read More